دہشت گرد کہہ کر پاکستان میں جب جسے چاو قتل کر دو

کراچی میں جنوبی وزیرستان سے تعلق رکھنے والے نوید مسعود اللہ کو پولیس نے محض اس لیے قتل کر دیا کہ اس نے لمبے بال رکھے تھے .چہرے پر نبی کی سنت سچا رکھی تھی. بس جب چاو کسی کو کافر کا فتوی لگا دو دہشت گرد سمجھ کر قتل کر دو قائداعظم محمد علی جناح نے کیا اسی لیے پاکستان بنایا تھا؟ کئی سال گزر گئے اسلامی قانون کہاں گیا؟ راو اقبال ایس پی نے اس نوجوان کو کیوں قتل کروایا اس کے پیچھے کیا سازش کار فرفا ہے؟ نوجوان کے اہل خانہ کو کیا انصاف ملے گا

تبصرہ جات بذریعہ فیس بک

اپنا تبصرہ لکھیں

اپنا تبصرہ بھیجیں